پیغمبرِ اسلام حضرت محمد مصطفیٰ صلی اللہ علیہ و آلہ وسلم کی مدحت، تعریف و توصیف، شمائل و خصائص کے نظمی اندازِ بیاں کو نعت یا نعت خوانی یا نعت گوئی کہا جاتا ہے۔عربی زبان میں نعت کیلئے لفظ "مدحِ رسول" استعمال ہوتا ہے۔ اسلام کی ابتدائی تاریخ میں بہت سے صحابہ اکرام نے نعتیں لکھیں اور یہ سلسلہ آج تک جاری و ساری ہے۔ نعتیں لکھنے والے کو نعت گو شاعر جبکہ نعت پڑھنے والے کو نعت خواں یا ثئاء خواں بھی کہا جاتا ہے۔

Wednesday, 4 December 2013

NAAT- HAAL E DIL APNA SUNAUN TO SUNAUN KAISE

الحمد لله رب العالمين والصلاة والسلام على سيد الأنبياء والمرسلين أما بعد فاعوذ بالله من الشيطان الرجيم بسم الله الرحمن الرحيم

Haal e dil apna sunaun to sunaun kaise... 
daag seene ke dikhaun to dikhaun kaise!!!

tham lete ho musibat mein hamesha sarkar...
itne ehsaan ginaun to ginaun kaise!!!

pul se guzri to ye dozakh ne lagai hai sda...
ye nabi ka hai jalaun to jalaun kaise!!!

aaj aagosh mein kaabe ne sadqe tere...
shukr mola ka bja laun to laun kaise!!!

chod do lete chalo khulde bareen ki janib...
ye to Shakir hai rulaun to rulaun kaise!!!

lab e hassan o raza noori ka sadqa shakir...
tohfa e ishq nibhaun to nibhaun kaise!!!

Posted by: Binte Ishrat

No comments:

Post a Comment