پیغمبرِ اسلام حضرت محمد مصطفیٰ صلی اللہ علیہ و آلہ وسلم کی مدحت، تعریف و توصیف، شمائل و خصائص کے نظمی اندازِ بیاں کو نعت یا نعت خوانی یا نعت گوئی کہا جاتا ہے۔عربی زبان میں نعت کیلئے لفظ "مدحِ رسول" استعمال ہوتا ہے۔ اسلام کی ابتدائی تاریخ میں بہت سے صحابہ اکرام نے نعتیں لکھیں اور یہ سلسلہ آج تک جاری و ساری ہے۔ نعتیں لکھنے والے کو نعت گو شاعر جبکہ نعت پڑھنے والے کو نعت خواں یا ثئاء خواں بھی کہا جاتا ہے۔

Sunday, 1 December 2013

NAAT- DUKHIYO PE KARAM APNAYA SALLE .ALA KARNA.

الحمد لله رب العالمين والصلاة والسلام على سيد الأنبياء والمرسلين أما بعد فاعوذ بالله من الشيطان الرجيم بسم الله الرحمن الرحيم

Dukhiyoon pe karam apna ya salle .ala karna...
khairaat hamein apne jalwoon ki ata karna!!!


kab tak mere aaqa yun ye zeest basar hogi...
batlao shab e gum ki kis aan sahar hogi...
ab reham o karam apna mehboob e khuda karna!!!


hum to hain raheen e gum ayr hijr k mare hain...
jo kuch bhi hai lekin hum deewane tumhare hain...
maqbool diwano ki sarkar dua karna!!!


har chand ki chokhat se ye dur deewana hai...
lekin ya nabi har pal nazroon mein madeena hai...
beemar e madeena hun sarkaar dwa karna!!!


muddat se parehsa(n) hun jeeta hun na marta hun...
yado mein tumhari haan sarakr tadapta hun...
ISHRAT se hui sarzad sab maaf khta karna!!!

Posted by: Binte Ishrat

No comments:

Post a Comment