پیغمبرِ اسلام حضرت محمد مصطفیٰ صلی اللہ علیہ و آلہ وسلم کی مدحت، تعریف و توصیف، شمائل و خصائص کے نظمی اندازِ بیاں کو نعت یا نعت خوانی یا نعت گوئی کہا جاتا ہے۔عربی زبان میں نعت کیلئے لفظ "مدحِ رسول" استعمال ہوتا ہے۔ اسلام کی ابتدائی تاریخ میں بہت سے صحابہ اکرام نے نعتیں لکھیں اور یہ سلسلہ آج تک جاری و ساری ہے۔ نعتیں لکھنے والے کو نعت گو شاعر جبکہ نعت پڑھنے والے کو نعت خواں یا ثئاء خواں بھی کہا جاتا ہے۔

Friday, 2 August 2013

NAAT - HUM MADINE SE ALLAH KYUN AA GYE...

الحمد لله رب العالمين والصلاةالسلام على سيد الأنبياء والمرسلين أما بعد فاعوذ بالله من الشيطان الرجيم بسم الله الرحمن الرحيم


Hum madine se lillah kyun aa gye...   Qalb e hairaan ki tasqeen wahin reh gyi!!!
Dil wahin reh gya jaan wahin reh gyi...   Kham usi dar pe apni jabeen reh gyi!!!


Yaad aate hain humko wo shaam o sehar...   wo sukoon e dilo jaano rooho nazar!!!
Ye unhi ka karam hai unhi ki ata...   ek kaifiyate dil nashin reh gyo!!!


Allah allah wahan ka durood o salaam... allah allah wahan ka sujood o qiyaam!!!
Allah allah wahan ka wo kaif  e dawaam... wo salaat e sukoon aafreen reh gyi!!!


Jis jagah sajda rezi ki lazzat mili... jis jagah har qadam unki rehmat mili!!!
Jis jagah noor rehta hai shaam o sehar...   wo falak reh gya wo zameen reh gyi!!!


Padke nasrumminallahi fathun qareeb...   hum rawan jab hue sue kue habib!!!
Barkatein rehmatein saath chalne lagin...   be basi zindagi ki wahin reh gyi!!!


Zindagaani wahin kaash hoti basar...   kaash behzaad aate na hum lot kar!!!
Aur puri hui har tamanna magar...   ye tamanna e qalb e hazeen reh gyi!!!








1 comment: