پیغمبرِ اسلام حضرت محمد مصطفیٰ صلی اللہ علیہ و آلہ وسلم کی مدحت، تعریف و توصیف، شمائل و خصائص کے نظمی اندازِ بیاں کو نعت یا نعت خوانی یا نعت گوئی کہا جاتا ہے۔عربی زبان میں نعت کیلئے لفظ "مدحِ رسول" استعمال ہوتا ہے۔ اسلام کی ابتدائی تاریخ میں بہت سے صحابہ اکرام نے نعتیں لکھیں اور یہ سلسلہ آج تک جاری و ساری ہے۔ نعتیں لکھنے والے کو نعت گو شاعر جبکہ نعت پڑھنے والے کو نعت خواں یا ثئاء خواں بھی کہا جاتا ہے۔

Friday, 2 August 2013

NAAT - BEKHUD KIYE DETE HAIN

الحمد لله رب العالمين والصلاة والسلام على سيد الأنبياء والمرسلين أما بعد فاعوذ بالله من الشيطان الرجيم بسم الله الرحمن الرحيم

Bekhud kiye dete hain andaaz hijaabana...
Aa dil mein tujhe rakh lun ay jalwa e janana!!!

Itna to karam karna ay chashme karimana...
Jam jaan laboon par ho tum saamne aa jaana!!!

Ji chahta hai tohfe mein bhejun unhein ankhein...
Darshan darshan ka to nazrane ka nazrana!!!

Mein hosh o hawaas apne is baat pe kho betha...
Hans kar jo kaha tumne aaya mera deewaana!!!

Dunya mein jab tumne mujhe apna banaya hai...
Mehshar mein bhi keh dena ye hai deewaana!!!

Kyun aankh milayi thi kyun aag lagaithi...
Ab rukh ko chupa bethe karke mujhe deewaana!!!

Peene ko pee lunga bas shart zara si hai...
Ajmer ka saaqi ho bagdaad ka mekhaana!!!

Bedum meri qismat mein sajee hain usi dar...
Chuta hai na chute ga sang e dare janana!!!


No comments:

Post a Comment