پیغمبرِ اسلام حضرت محمد مصطفیٰ صلی اللہ علیہ و آلہ وسلم کی مدحت، تعریف و توصیف، شمائل و خصائص کے نظمی اندازِ بیاں کو نعت یا نعت خوانی یا نعت گوئی کہا جاتا ہے۔عربی زبان میں نعت کیلئے لفظ "مدحِ رسول" استعمال ہوتا ہے۔ اسلام کی ابتدائی تاریخ میں بہت سے صحابہ اکرام نے نعتیں لکھیں اور یہ سلسلہ آج تک جاری و ساری ہے۔ نعتیں لکھنے والے کو نعت گو شاعر جبکہ نعت پڑھنے والے کو نعت خواں یا ثئاء خواں بھی کہا جاتا ہے۔

Sunday, 7 July 2013

Manqabat - TERA NAAM KHWAJA MOINUDDIN

الحمد لله رب العالمين والصلاة والسلام على سيد الأنبياء والمرسلين أما بعد فاعوذ بالله من الشيطان الرجيم بسم الله الرحمن الرحيم

Tera naam khwaja moinuddin tu rasool e paak ki aal hai...
Teri shaan khawaja e khwajgaan tujhe bekasoon ka khyaal hai...


Mera khwaja ataa e rasool hai...
Wo bahar e chisht ka phool hai...
Wo bahar e gulshan e fatima...
Chaman e ali ka nihaal hai!!!


Main gda e khwaja e chisht hun...
Mujhe is gadai pe naaz hai...
Mera naaz khwaja pe kyun na ho...
Mera khwaja banda nawaaz hai!!!


Yahan bheek milti hai be gumaan...
Ye bade sakhi ka hai aastaan...
Yahan sab ki bharti hain jholiyan...
Ye dar e gareeb nawaaz hai!!!


Mera bigda waqt sanwaar do...
Mere khwaja mujhko nawaaz do...
Teri ik nigaah ki baat hai...
Meri zindagi ka sawaal hai!!!



Posted by Imbisaat Musaddiqa

1 comment: